Leave a comment

ٹی ٹونٹی کا عالمی کپ

ایشیا کپ میں بھارت اور بنگلہ دیش سے ہارنے کے بعد عالمی کپ میں پاکستان ٹیم سے کسی کو زیادہ امیدیں نہیں تھی۔ اس کے علاوہ بھارتی جنونیوں کے پاکستان ٹیم کو نہ کھیلنے دینے کی دھمکیوں کے بعد عوام و خواص کوئی بھی اس بات سے واقف نہیں تھا کہ پاکستان ٹیم عالمی کپ میں حصہ لے بھی پائے گی کہ نہیں مگر ٹورنامنٹ کے آغاز سے چند دن قبل حالات نے پلٹا کھایا اور پاکستان ٹیم کو حکومت نے بھارت جانے کی اجازت دے دی۔ بھارت میں پاکستان نے سرل لنکا کے ساتھ پریکٹس میچ کھیلا اور جیت لیا۔چونکہ پاکستان سری لنکا کو ایشیا کپ میں ہرا چکا تھا اور یوں بھی یہ مشقی مقابلہ تھا تو کسی نے اس کو اہمیت نہ دی۔

پہلا میچ پاکستان کا بنگلہ دیش سے تھا جو کہ کوکتہ میں ہوا۔ پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی اور احمد شہزاد اور حفیظ کی نصف سینچریوں اور آفریدی کے برق رفتار انچاس سے تقویت پاتے ہوئے دو سو کا ہندسہ کھڑا کر دیا۔ جواب میں بنگالی ڈیڑھ سو بھی نہ کر پائے یوں پاکستان یہ میچ آسانی سے جیت گیا۔

اگلا مقابلہ بھارت سے تھا۔ بھارت سے پاکستان عالمی کپ کے میچوں میں کبھی جیت نہیں پایا اور اس بار بھی پاکستان نے ہارنے کی روایت برقرار رکھی۔ کچھ بھارت کے کھلاڑی بھی ظالم تھے اور کچھ ہمین ہارنے کا شوق بھی تھا۔ بھارت نے پاکستان کو پہلے بیٹمگ کرائی اور ہماری ٹیم مقررہ اوورز میں ایک سو اٹھارہ بنا پائے جو کہ  انھوں نے چار وکٹوں پر پورے کر لئے۔ تیسرے میچ میں نیوزی لینڈ نے ہمیں ایک سو اکاسی کا ہدف دیا ۔ شرجیل کے لاٹھی چارج کے نتیجے میں پاکستان نے ابتدائی چھ  اوورز میں چھیاسٹھ رنز بنا لئے تھے۔ محسوس ہو رہا تھا کہ پاکستان یہ میچ بآسانی جیت جائے گا  مگر پھر شرجیل کے آئوٹ ہونے کی دیر تھی کہ ہمارے بلے باز بھول گئے کہ یہ بیس اوورز کا میچ ہے اور لگے دورہ انگلینڈ کے لئے جگہ چکی کرنے۔  نیوزی لینڈ  سے شکست کے بعد سیمی فائنل کھیلنے کی امیدیں  اگر مگر کے گورکھ دھندے مین پھنس چکی تھیں۔ اگلے گروپ میچ میں بنگلہ دیش ایک موقع پر بھارت کو ہرانے لگا تھا تو پاکستانیوں کی امیدیں پھر جاگ اٹھیں مگر بنگالیوں کی کشتی وہاں ڈوبی جہاں پانی کم تھا۔ بنگلہ دیش والے آخری تین بالوں پر مطلوبہ دو رنز نہ بنا سکے اور میچ ہار گئے۔ بچی کھچی امیدوں پر پانی کینگروز نے پھیرا اور پاکستانی قوم کو ‘اگر مگر’ کی اذیت سے نجات دلائی۔ بھارت نے آسٹریلیا کو ہرا کر سیمی فائنل میں جگہ حاصل کی جب کہ کیویز سب کو مات دے کر پہلے ہی سیمی فائنل تک رسائی پا چکے تھے۔

دوسرے گروپ میں ویست انڈیز اورانگلستان نے تین تین میچ جیتے اور سیمی فائنل کے لئے جگہ پائی۔ جنوبی افریقہ نے دو سری لنکا اور افغانستان نے ایک ایک میچ جیتا۔  افغانستان نے آخری میچ میں ویسٹ انڈیز کو مات دی۔

پہلے سیمی فائنل میں انگلستان اور نیوزی لینڈ مقابل تھے۔ انگلستان کی معیاری گیند بازی کے باعث نیوزی لینڈ مقررہ اوورز مین ایک سو چون رنز ہی بنا سکی۔ انگلستان نے ہدف با آسانی پورا کر کے فائنل میں رسائی حاصل کر لی۔ دوسرے سیمی فائنل میں ویسٹ انڈیز کا مقابلہ میزبان بھارت سے تھا۔ بھارت نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے ویرت کوہلی کی شاندار بلے بازی کی بدولت ویسٹ انڈیز کو ایک سو ترانوے کا ہدف دیا۔ ویسٹ انڈیز کا آغاز اچھا نہ تھا۔ ابتدائی وکٹ جلدی گر گئے مگر پھر لینڈل سمنز اور آندرے اسل کے لاٹھی چارج نے بھارت کو دن میں بلکہ سرِ شام ہی تارے دکھا دیئے اور ویسٹ انڈیز نے مطلوبہ ہدف دو گیندیں قبل حاصل کر کے فائنل کا ٹکٹ کٹوایا۔

فائنل میں انگلستان نے پہلے بلے بازی کی اور مقررہ اوورز میں ایک سو اکسٹھ رنز بورڈ پر سجائے۔ ویسٹ انڈیز کے لئے یہ ہدف بڑا نہ تھا مگر ابتدائی بلے بازوں کی وکٹین جلد گرنے سے دبائو میں آ گئی۔ مارلن سیموئلز نے اس ٹورنامنٹ میں کوئی قابلِ ذکر کارکردگی نہیں دکھائی تھی مگر فائنل میں انھوں نے ویسٹ انڈیز کی بیٹنگ کو سنبھالا دیئے رکھا۔ ان کے شاندار پچاسی رنز کے باوجود آخری اوور میں ویست انڈیز کو انیس رنز درکار تھے اور انگلستان میچ تقریبًا جیت چکا تھا کہ براتھ ویٹ نے آخری اوور کی ابتدائی چارون گیندون پر چھکے لگا کر ویسٹ انڈیز کو ناقابلِ یقین فتح دلائی۔

اس ٹورنامنٹ کا آگاز بھی چھکے سے ہوا جب مارٹن گپٹل نے ایشون کو پہلے میچ کی پہلے گیند پر چھکا رسید کیا اور اختتام براتھ ویٹ کے چھکوں نے کیا۔ ویسٹ انڈیز بیس اوورز کا عالمی کپ جیتنے والی پہلی ٹیم بن گئی۔ مارلن  سیموئل دو فائنل  میں مردِ بحران   کا اعزاز پانے والے پہلے کھلاڑی  بنے۔پاکستان کی کارکردگی مایوس کن رہی اور قومی کپتان کو اپنی کپتانی سے جبکہ کوچ کو اپنی کوچنگ سے ہاتھ دھونے پڑے۔

Advertisements

اپنی رائے سے نوازیئے۔

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s